NEWS/REPORTS/PROGRAMMES

Recovery Of Noori Academy YouTube Channel From Hacker

ہائی جیکر سے نوری اکیڈمی چینل کی واپسی،ڈائریکٹر کا اظہار تشکر


نوری اکیڈمی یوٹیوب چینل شہر مالیگاوں کا ایسا تعلیمی چینل ہے جس نے انتہائی کم وقت میں ملکی اور غیر ملکی سطح پر اپنی خدمات کا دائرہ وسیع کیا ہے۔ اس تعلیمی چینل پر یوپی ایس سی ، ایم پی ایس سی ، یو جی سی نیٹ، ریاستی سیٹ، ٹی ای ٹی، سی ٹی ای ٹی، پی ایچ ڈی، تلاٹھی، حکومتی امتحانات کی معلومات ، لیکچرز اور ملک بھر سے مختلف امتحانات کو کوالیفائی کرنے والے ٹاپرس کے انٹرویوز، نوٹس اور امتحانات کی رہبری پر مبنی ویڈیوز اپلوڈ کیے جاتے رہے ہیں۔چوبیس ہزار سے زائد سبسکرائبرس والے نوری اکیڈمی یوٹیوب چینل پر 329لیکچرزاور انٹرویوز موجود ہیں جن سے گیارہ لاکھ سے زائد ناظرین نے استفادہ کیاہیں۔نوری اکیڈمی یوٹیوب چینل نے انڈین ایڈمنسٹریٹیو سروسیس میں اپنی خدمات انجام دینے والے بہت سے آئی اے ایس، آئی پی ایس اور آئی آر ایس افسران کو مدعو کرکے پروگرامات کیے اور کئی افسران کو لائیو سیشن میں بلا کر ہزاروں طلبہ و طالبات کو ان افسران سے سوال وجواب اوراستفادہ کا موقع فراہم کیا۔ 17جون 2019ءکو کسی ہائی جیکر نے نقصان پہنچانے کی غرض سے چینل کو ہائی جیک کر لیا تھااور غیر ضروری مواد اپلوڈ کر کے سبس کرائبرس کو پریشان کر رہا تھا جس کی وجہ سے کئی لوگوں نے چینل چھوڑ دیا تھا،اللہ عزوجل ا وررسول اکرم صلی اللہ علیہ وسلم کے فضل وکرم سے چینل کو قانونی طور پر دوبارہ حاصل کر

لیا گیا ہے۔(الحمدللہ)۔


انٹرنیٹ کی وسیع وعریض دنیا میں چینل کو دوبارہ حاصل کرنا گھاس میں سوئی تلاش کرنے کے مانند تھامگر اللہ پاک کا فضل خاص ہوا۔اس ضمن میں چینل کے ڈائریکٹر عطاءالرحمن نوری نے بتایا کہ چینل کی واپسی میں یوٹیوب ٹیم انڈیا، شہر اے ایس پی نیلوتپل ،ڈی وائے ایس پی رتناکرناولے، آئی آر ایس آفیسر محمد نوح صدیقی ، کرائم رپورٹر متین حفیظ ،آصف ایم آر اور بھی کئی مخلص دوست واحباب کی کاوشیں شامل ہیں۔جن لوگوں نے چینل کو ہائی جیک ہوجانے کے سبب چھوڑ دیا تھا ان سے التماس ہے کہ تعلیمی ،معاشی اور سماجی پہلووں پر اربابِ علم ودانش کے لیکچر ز سے استفادہ کی غرض سے چینل کو دوبارہ سبس کرائب کریں۔

 

..:: FOLLOW US ON ::..


https://www.youtube.com/channel/UCXS2Y522_NEEkTJ1cebzKYw
http://www.jamiaturraza.com/images/Facebook.jpg
http://www.jamiaturraza.com/images/Twitter.jpg

 

Related Articles

Leave a Reply

Your email address will not be published.

Back to top button
error: Content is protected !!