ArticlesBiographyMaharashtra State Eligibility Test (MH-SET)NotesSHAKHSIYAATTET/CTET/UPTET EXAMUGC NET URDU

خلیل الرحمن اعظمی: حیات و خدمات

Khaleel-Ur-Rahman Azmi

خلیل الرحمن اعظمی
(اُردو کے شاعر اور نقاد)

l نام : خلیل الرحمن اعظمی
l تخلص :
l ولادت : 1927ء، سلطان پور
l وفات : 1978ء،اعظم گڑھ

خلیل الرحمن اعظمی اُردو کے شاعر اور نقاد تھے۔ ان کی پیدائش سلطانپور میں ہوئی تھی۔ ان کے والد کا نام مولانا محمد شفیع تھا۔1957ء میں خلیل الرحمن نے علی گڑھ یونی ورسٹی سے پی ایچ ڈی مکمل کی۔خلیل الرحمن علی گڑھ یونی ورسٹی میں شعبہ اُردو میں لیکچرار کے طور پر ملازمت اختیار کی تھی اور تاحیات اسی سے جڑے رہے۔خلیل الرحمٰن ترقی پسند مصنفین کی تحریک سے وابستہ تھے۔اپنے سیاسی خیالات کی وجہ سے خلیل الرحمن 1949ء میں کچھ وقت کے لیے قید ہوئے تھے۔خلیل الرحمن کا انتقال 1978ء میں ہوا ۔

شعری مجموعے

(۱) کاغذی پیرہن 1953ء[پہلا مجموعہ کلام] (۲) نیا عہد 1965ء[ دوسرا شعری مجموعہ ] (۳) نئی نظم کا سفر ( نظموں کا مجموعہ)
(۴) مقدمہ میرؔ (1936ء کے بعد)
(۵) آسماں اے آسماں،1956ء
(۶) زندگی اے زندگی 1983ء( آخری مجموعہ کلام،انتقال کے بعد شائع ہوا)
(۷) نئی نظم کا سفر ( مختلف شعرائے کرام کی نظموں کا مجموعہ )

تصانیف

(۱) مقدمہ کلام آتشؔ، دسمبر1959ء[یہ ان کے تحقیقی کارناموں میں سب سے پہلا تحقیقی مقالہ ہے اورتمام تصانیف میں سب سے پہلی تصنیف ۔ یہ کارنامہ اس وقت کا ہے جب خلیل الرحمن اعظمی بی اے کررہے تھے اور یہ مقالہ1948-49ء’’نگار‘‘میں قسط وار شائع ہوا۔ اور کتابی شکل میں 1959ء میں شائع ہوا۔[
(۲) نوائے ظفر]یہ خلیل الرحمن اعظمی کا دوسرا تحقیقی مقالہ ہے ،اسے انتخاب کلام بہادر شاہ ظفر بھی کہاجاتا ہے۔ مع مقدمہ1957ء میں پہلی بار علی گڑھ سے اور دوسری بار 1959ء میں دہلی سے شائع ہوا۔] (۳) اُردو میں ترقی پسند ادبی تحریک، 1972ء[ اس مقالہ کو خلیل الرحمن اعظمی نے ڈاکٹریٹ کی ڈگری حاصل کرنے کی غرض سے لکھ کر شعبۂ اُردو علی گڑھ مسلم یونی ورسٹی میں پیش کیاتھا۔ 1972ء میں انجمن ترقی اردو علی گڑھ سے شائع کرایا۔ پروفیسر رشید احمد صدیقی کو نگرانی میں یہ مقالہ پایۂ تکمیل کو پہنچا۔] (۴) فکر و فن، 1956ء،[یہ خلیل الرحمن اعظمی کاپہلا تنقیدی مضامین کامجموعہ ہے۔1956ء میں کتاب گھر دہلی سے شائع ہوا۔
[ مشمولات:( ۱)معروضات (۲) غالبؔ اور عصر جدید (۳) بہادر شاہ ظفرؔ
(۴) خواجہ میردردؔ (۵) حسرتؔ کے شاعرانہ مرتبے کا تعین
(۶) داغ ؔکافن (۷) طرز مومنؔ (۸)جوشؔ ملیح آبادی (۹) جمیل مظہری
(۱۰) حجازؔ کی شاعری میں عورت کا تصور (۱۱) جذبیؔ۔] (۵) زاویہ نگاہ
[یہ خلیل الرحمن اعظمی کے تنقیدی مضامین کادوسرا مجموعہ ہے جو1966ء میں آدرش پبلشرز’’گیا‘‘ سے شائع ہوا۔ اس میں شامل کیے گئے مضامین کے عنوانات یہ ہیں: اُردو کے تنقیدی مسائل، جگر مراد آبادی ، اختر الایمان دونئے شعری مجموعے۔ سرسید کے ادبی تصورات ، اردو شعر وادب میں علی گڑھ کاحصہ۔اردو نظم کا رنگ وآہنگ ، فراق گورکھپوری ، ابوا لکلام کے مکاتیب۔] (۶) مضامین نو
[تنقید ی مضامین کاتیسرا اور آخری مجموعہ ہے۔1977ء میں شائع ہوا۔اس میں چار حصے ہیں۔ پہلے حصے میں مضامین ،دوسرے میں مسائل، تیسرے میں تبصرے اورچوتھے میں شخصیات ہیں۔(7؍ مضامین، 5؍ رسائل ، 15؍تبصرے اور 2؍شخصیات پر مضامین) ]

ریفرنس بک

(۱) مضامینِ خلیل الرحمن اعظمی، جلد اول2004 ء، انتخاب:پروفیسر شہر یار (9مضامین)

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Back to top button
Translate »
error: Content is protected !!